رفح میں رہائشی مکان پر اسرائیلی فضائی حملے میں چار فلسطینی شہید | اسرائیل فلسطین تنازعہ کی خبریں۔

اسرائیلی جنگی طیاروں نے غزہ کی پٹی کے جنوب میں واقع رفح گورنری میں برازیل کے پڑوس میں شہیدہ خاندان سے تعلق رکھنے والے ایک گھر پر بمباری کی ہے۔

جمعرات کو ہونے والے اس حملے میں چار افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے تھے۔ ملبے تلے کم از کم 15 افراد لاپتہ ہیں۔

زخمیوں کو ابو یوسف النجر اسپتال اور رفح کے کویتی اسپیشلٹی اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے۔

گھر، جو عبداللہ شہدا، ایک ڈاکٹر کا تھا، درجنوں بے گھر لوگوں کو پناہ دیتا تھا۔

محلے کے لوگوں نے سول ڈیفنس کے عملے کے ساتھ مل کر ملبے کو سادہ اوزاروں اور اپنے ننگے ہاتھوں سے کھود کر ملبے تلے دبے ہوئے ہلاک ہونے والوں کی لاشیں نکالنے کی کوشش کی۔

رفح میں ابو ڈبہ اور عاشور خاندان کے گھروں پر دو الگ الگ حملوں میں، فضائی بمباری سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 25 ہو گئی۔

یہ حملے اسی رات ہوئے جب 7 اکتوبر کے بعد سے پانچویں مرتبہ اسرائیلی فورسز کی جانب سے مواصلاتی نیٹ ورک ایک بار پھر منقطع کر دیا گیا۔

ایک بیان میں، غزہ میں سرکاری میڈیا آفس نے اسرائیلی پالیسی کو "دانستہ طور پر عمل” قرار دیا۔

میڈیا آفس نے کہا کہ "مواصلات اور انٹرنیٹ منقطع کرنے کا مطلب یہ ہے کہ فلسطینیوں کو جان لیوا آفات کا سامنا کرنا پڑے گا، کیونکہ بہت سے لوگ (اسرائیلی حملوں میں) ہلاک اور زخمی ہوں گے جن تک کوئی نہیں پہنچ سکے گا”۔ "اس طرح ہلاک ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو گا۔”

جمعرات کے روز 280 سے زائد فلسطینی اور تقریباً 800 دیگر زخمی ہوئے، جب کہ غزہ کی پٹی میں فضائی حملوں اور توپ خانے کی گولہ باری کا سلسلہ جاری رہا، خاص طور پر شمالی غزہ کے جنوبی شہر خان یونس، اور غزہ شہر کے مشرق میں واقع علاقوں میں۔

فلسطینی حکام کے مطابق، ساحلی علاقے پر اسرائیلی جارحیت کے آغاز سے، کم از کم 18,797 افراد ہلاک اور 50,000 سے زیادہ زخمی ہو چکے ہیں۔ تقریباً 7,780 فلسطینی لاپتہ ہیں اور اپنے ہی گھروں کے ملبے تلے دب کر ہلاک ہو چکے ہیں۔

جاری بمباری سے 253,000 سے زیادہ ہاؤسنگ یونٹس کو جزوی طور پر نقصان پہنچا ہے، اور 52،000 سے زیادہ ہاؤسنگ یونٹس اسرائیلی فضائی حملوں سے مکمل طور پر منہدم ہو گئے ہیں یا ناقابل رہائش ہو گئے ہیں۔

About The Author

Leave a Reply

Scroll to Top