کاغذات نامزدگی جمع کرانے کا عمل شروع

سیکیورٹی اہلکار 21 ستمبر 2023 کو اسلام آباد میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ہیڈ کوارٹر میں پہرے پر کھڑے ہیں۔ — اے ایف پی
سیکیورٹی اہلکار 21 ستمبر 2023 کو اسلام آباد میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ہیڈ کوارٹر میں پہرے پر کھڑے ہیں۔ — اے ایف پی
 

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے بدھ کو اگلے سال 8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات میں حصہ لینے کے خواہشمند امیدواروں سے کاغذات نامزدگی وصول کرنے کا عمل شروع کردیا۔

امیدوار صبح 8:30 بجے سے شام 4:30 بجے تک انتخابی ادارے سے فارم جمع کر سکتے ہیں، اور 8 فروری 2024 کے انتخابات کے لیے 22 دسمبر (جمعہ) تک اپنے کاغذات نامزدگی جمع کرا سکتے ہیں۔

الیکشن کمیشن 23 دسمبر کو امیدواروں کی ابتدائی فہرست جاری کرے گا جب کہ کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 24 سے 30 دسمبر تک ہوگی۔

الیکٹورل اتھارٹی 13 جنوری کو پارٹیوں اور آزاد امیدواروں کو انتخابی نشان الاٹ کرے گی، جو کہ 8 فروری کو ہونے والے انتخابات میں ایک ماہ سے بھی کم وقت ہے۔

کراچی میں قومی اسمبلی کی 22 اور صوبائی اسمبلی کی 47 نشستوں کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائے جائیں گے جب کہ قومی و صوبائی اسمبلیوں کے لیے 69 ریٹرننگ افسران (آر اوز) اور 7 ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران (ڈی آر اوز) تعینات کیے گئے ہیں۔

ای سی پی نے قبل ازیں کہا تھا کہ صوبائی اسمبلی اور قومی اسمبلی میں خواتین اور اقلیتوں کی مخصوص نشستوں کے لیے ممکنہ امیدوار اپنے متعلقہ آر اوز اور ضلعی الیکشن کمیشن سے اپنے کاغذات نامزدگی ایک قیمت پر حاصل کر سکتے ہیں۔

تاہم کاغذات نامزدگی 20 دسمبر سے 22 دسمبر تک اپنے متعلقہ آر اوز کو جمع کرانا ہوں گے۔ اور جانچ پڑتال سمیت تمام امور بھی وہیں کیے جائیں گے۔

الیکشنز ایکٹ 2017 کے مطابق انتخابی ادارے کی جانب سے ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران (DROs) اور ریٹرننگ افسران (ROs) کے حلف اٹھانے کے بعد کاغذات نامزدگی جمع کرنے کا عمل شروع ہوتا ہے۔

کم از کم 859 واپس آنے والے آر اوز نے پہلے ہی پیر کو اپنی تین روزہ تربیت مکمل کی، جبکہ منگل کو 144 ڈی آر اوز کو تربیت دی گئی۔ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ایک عہدیدار اور وکیل کے لاہور ہائی کورٹ جانے سے پہلے ہی آر اوز نے ایک روزہ تربیت حاصل کر لی تھی، جس کے نتیجے میں ان کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن معطل کر دیا گیا تھا۔ اس کے نتیجے میں، ان کی تربیت 14 دسمبر کو معطل کردی گئی تھی۔

تاہم سپریم کورٹ نے لاہور ہائیکورٹ کے حکم کو کالعدم قرار دیتے ہوئے ای سی پی کو انتخابی شیڈول جاری کرنے کی ہدایت کی جس کے نتیجے میں ڈی آر اوز اور آر اوز سے متعلق نوٹیفکیشن بحال ہو گیا۔

 

About The Author

Leave a Reply

Scroll to Top